جیسے جیسے رات جا رہی ہے

ایک علم کے سائے میں خیمے، مہوے دُعا خیموں میں پیاسے
پیاسوں کی آواز فضا میں ، شکرِدوہرا رہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

دُور وطن سے کچھ پردیسی سہہ کے ازیّت تشنہ لبی کی
دیکھ رہے ہیں جانبِ دریا موج قیا مت ڈھارہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

آمنے سامنے دو لشکر ہیں صبر ادھر اُس جا خنجر ہیں
فوج اِدھر مصروفِ عبادت اک تیغیں چمکا رہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

ایک بہن کو فکر یہی ہے رات یہ کیوں ڈھلتی جاتی ہے
اِس کی سحر کے پیچھے پیچھے صبحِ شہادت آرہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

کہتی ہیں بچوں سے مائیں آئو تمہیں ہم آج سمجھائیں
وقت یہی قربانی کا ہے دیںپہ مصیبت آرہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

وہ جو شبیہہ پیغمبر ہے زد پہ سناں کی اُس کا جگر ہے
موت اُسی کی خاطر نیزہ مقتل میں لہرارہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

جھولا جھولنے والا بچہ لوری سُن کر بھی نہ سویا
بچے کو آدابِ شہادت لوری خود سمجھارہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

ساتھ اسے اس بن میں اک ماں بال کھولے باحالِ پریشاں
جھاڑتی ہے مقتل کی زمیںکو رُوتی ہے تھرّارہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔

رکھ دو قلم ریحان و سرور دردبھرا ہے صبحُ کا منظر
لہجہئِ اکبر سے جو اُبھری صوتِ اذان وہ آرہی ہے
جیسے جیسے رات ۔۔۔۔


jaise jaise raat ja rahi hai

ek alam ke saaye may qaime, mehwe dua qaimo may pyase
pyaso ki awaaz fiza may, shukre khuda dohra rahi hai
jaise jaise raat....

door watan se kuch pardesi seh ke aziyat tishnalabi ki
dekh rahe hai jaanibe darya mauj qayamat dha rahi hai
jaise jaise raat....

aamne samne do lashkar sabr idhar us ja khanjar hai
fauj idhar masroofe ibadat ek tayghein chamka rahi hai
jaise jaise raat....

ek behan ko fikr yehi hai raat ye kyon dhalti jati hai
iski sehar ke peeche peeche subhe shahadat aa rahi hai
jaise jaise raat....

kehti hai bachon se maayein aao tumhein aaj sayjayein
waqt yehi qurbani ka hai deen pe musibat aa rahi hai
jaise jaise raat....

wo jo shabihe payghambar hai das pe sina ki uska jigar hai
maut usi ki khaatir naiza maqtal may lehra rahi hai
jaise jaise raat....

jhoola jhoolne wala bacha lori sunkar bhi na soya
bache ko aadabe shahadat lori khud samjha rahi hai
jaise jaise raat....

saath isay is ban may ek maa baal khule bahaale pareshan
jhaadti hai maqtal ki zameen ko roti hai thar-ra rahi hai
jaise jaise raat....

rakhdo qalam rehan o sarwar dard bhara hai subho ka manzar
lehjaye akbar se jo ubhri hote azan wo aa rahi hai
jaise jaise raat....
Noha - Jaise Jaise Raat
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online