اس جواں کی مگر بات ہی اور ہے
نازِ ہر دو جہاں شِہ کے لشکر میں ہیں
سارے شیرِ جہاں شِہ کے لشکر میں ہیں
کتنے ابرو کماں شِہ کے لشکر میں ہیں
کیسے کیسے جواں شِہ کے لشکر میں ہیں
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔

اُن میں حیدر کے سروے صحیح کد بھی ہیں
باغِ مُسلم کے سیوو بھائی خد بھی ہیں
مادمِ کے لال و زبر جد بھی ہیں
یوں تو قاسم بھی عو ن و محمدبھی ہیں
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔

کون ہے جان کو جس نے وارا نہیں
کون ہے جو کہ آنکھوں کا تارا نہیں
کون ہے جو کہ شاہِ دیں کو پیارا نہیں
کس نے گھوڑے سے گر کر پُکارا نہیں
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔

کس نے شِہ سے بلائوں کو ٹالانہیں
خود کو دُشمن کی فوجوں میں ڈالا نہیں
کون ہے جو کہ گھر کا اُجالا نہیں
کون ہے جس کو زینب نے پالا نہیں
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔

کھا کہ تیغیںگرے رن میں کیا کیا حسیں
لاش پر جن کی تنہا گئے شاہِ دیں
کانپ اُٹھا فلک اور لرزی زمیں
بیبیاں پھر بھی خیمے سے نکلی نہیں
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔

کس نے زخمِ سناں دل پہ کھایا نہیں
کس نے سینے کو چھلنی بنایا نہیں
کس کے لاشے کو شِہ نے اُٹھایا نہیں
ہاتھ لیکن بہن نے بٹایا نہیں
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔

ن میں ہر ایسا تھا شیریں زبانر
جس کے لہجے پہ دائود بھی دے دے جان
ان میں جس کو بھی کہتے شہِ انس و جان
صبح عاشور وہ بڑھ کے دیتا اذان
اس جواں کی مگر ۔۔۔۔۔


is jawan ki magar baat hi aur hai
naaze har do jahan sheh ke lashkar may hai
saare shere jehan sheh ke lashkar may hai
kitne aburu kama sheh ke lashkar may hai
kaise kaise jawan sheh ke lashkar may hai
is jawan ki magar....

un may hyder ke sarway sahi khad bhi hai
baaghe muslim ke saywo bahi khad bhi hai
madame haq ke lal o zabar jad bhi hai
yun to qasim bhi aun o mohamed bhi hai
is jawan ki magar....

kaun hai jaan ko jisne waara nahi
kaun hai jo ke aankhon ka taara nahi
kaun hai jo shahe deen ko pyara nahi
kisne ghoday se gir kar pukaran nahi
is jawan ki magar....

kisne sheh se bala-on ko taala nahi
khud ko dushman ki faujo may daala nahi
kaun hai jo ke ghar ka ujaala nahi
kaun hai jisko zainab ne paala nahi
is jawan ki magar....

khaake tayghe giray ran may kya kya haseen
laash par jinki tanha gaye shahe deen
kaamp utha falak aur larzi zameen
bibyan phir bhi qaime se nikli nahi
is jawan ki magar....

kisne zakhme sina dil pe khaya nahi
kisne seene ko chalni banaya nahi
kiske laashe ko sheh ne uthaaya nahi
haath lekin behan ne bataya nahi
is jawan ki magar....

ran may har aisa tha shireen zaban
jiske lehje pe dawood bhi dede jaan
inmay jisko bhi kehte shahe ins o jaan
subhe ashoor wo badhke deta azan
is jawan ki magar....
Noha - Is Jawan Ki Magar

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online