کس قدر تھا وزن آخر حُرملا کے تیر کا
زخم ہے تازہ ابھی تک گردنِ بے شیر کا

ضبطِ غم سے زرد ہے چہرہ شاہِ دلگیر کا
سامنا کیسے کریں گے مادرِ بے شیر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔

باپ کے ہاتھوں پہ بچا ذبح ہو کر رہ گیا
کام قاتل نے کیا ہے تیر سے شمشیر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔

سوکھ جا نا چاہیئے تا حشرتجھ کو اے فرا،ت
چند قطروں پر تیرے کیا حق نہ تھا بے شیر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔

گود بھی ویران ہے اور مانگ بھی اُجڑی تیری
صبر کر بانو کے یہ سب کھیل ہے تقدیر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔

خشک ہونٹوں کے تبسم کا یہ اک اعجاز ہے
چھا گیا ہو کر بکھرنا شام کی تصویر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔

باپ کی تلوار سے بیٹے کی مرقد کھودنا
کربلا میں سب سے مشکل کام ہے شبیر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔

کیوں کسی کی گود میں اصغر نظر آتا نہیں
خوف سے لرزا ہے دل شاہد کسی ہمشیر کا
کس قدر تھا وزن ۔۔۔۔۔


kis khadar tha wazn aakhir hurmala ke teer ka
zakhm hai taaza abhi tak gardane baysheer ka

zabte gham se zard hai chehra shahe dilgeer ka
saamna kaise karenge maadare baysheer ka
kis khadar tha wazn....

baap ke haathon pe bacha zibha hokar reh gaya
kaam qaatil ne kiya hai teer se shamsheer ka
kis khadar tha wazn....

sookh jana chahiye ta-hashr tujhko ay furaat
chand khatron par tere kya haq na tha baysheer ka
kis khadar tha wazn....

godh bhi veeran hui aur maang bhi ujdi teri
sabr kar bano ke ye sab khel hai taqdeer ka
kis khadar tha wazn....

khusk honton ke tabassum ka ye ek aijaz hai
thagiya hokar bikharna sham ki tasveer ka
kis khadar tha wazn....

baap ki talwaar se bete ki marqad khodna
karbala may sab se mushkil kaam hai shabbir ka
kis khadar tha wazn....

kyun kisi ki godh may asghar nazar aata nahi
khauf se larza hai dil shahid kisi hamsheer ka
kis khadar tha wazn....
Noha - Hurmala Ke Teer
Shayar: Shahid Jafer
Nohaqan: Kumail Abbas
Download Mp3
Listen Online