ہونٹوں پہ میرے نامِ علی نامِ علی ہے
سُن کر جسے مشکل بڑی مشکل میں پڑی ہے

اپنا تو وہی رب وہی قرآن و نبی ہے
چودہ سو برس پہلے جو تھا دین وہی ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

ہے بارہ اماموں کی وہ ہی رہبری اب بھی
اک بات بھی اس میں نہہے لگتی ہےبڑی
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

ہے پنجتنِ پاک کسی رب سے عبارت
اپنے لیئے جو راہِ عمل ہم نے چُنی ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

ماں کہتی تھی قاسم تو سوئے خُلد سدھارے
کبریٰ کے مقدر میں لکھی در بدری ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

بانو کا یہ نوحہ تھاکہ کب آئو گے اصغر
آغوش میں لینے کو یہ ماں در پہ کھڑی ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

گردن سے سکینہ کے کوئی کھول دے رسی
بچی کا گلا گھٹتاہے اب سانس رُکی ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

زینب نے کہا چھوڑ گئی ساتھ سکینہ
ننھی سی لحد شام کے زندان میں بنی ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

شہزادی کہی جاتی تھی کوفے میں جو زینب
بے پردہ وہ ہی اب سرِ دربار کھڑی ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

بیٹی ہے یہ ہی فاطمہ زہر ا و علی کی
بازاروں میں جو ساتھ چلی جو کے ہےپھری
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔

یہ ماتمِ شاہِ زیست کا حاصل ہے مجاہد
دم سینے میں ہے جب تک یہ ہی نوحہ گری ہے
ہونٹوں پہ میرے ۔۔۔


honton pe mere namay ali namay ali hai
sunkar jise mushkil badi mushkil may padi hai

apna to wohi rab wohi quran o nabi hai
chauda sau baras pehle jo tha deen wohi hai
honton pe mere....

hai baara imamo ki wohi rehbari ab bhi
ek baat bhi ismay na badi hai lagti hai
honton pe mere....

hai panjetane paak kisi rab se ibarat
apne liye jo raahe amal humne chuni hai
honton pe mere....

maa kehti thi qasim to suye khuld sidhaare
kubra ke muqaddar may likhi dar badari hai
honton pe mere....

bano ka ye nauha ke kab aaoge asghar
aghosh may lene ko ye maa dar pe khadi hai
honton pe mere....

gardan se sakina ke koi khol de rassi
bachi ka gala ghut-ta hai ab saans ruki hai
honton pe mere....

zainab ne kaha chor gayi saath sakina
nanhi si lehad sham ke zindan may bani hai
honton pe mere....

shehzadi kahi jaati thi koofe may jo zainab
be-parda wohi ab sare darbar khadi hai
honton pe mere....

beti hai yehi fathema zehra o ali ki
bazaaron may jo saath chali jo ke phiri hai
honton pe mere....

ye matame sheh zeest ka haasil hai mujahid
dam seene may hai jab tak yehi nauhagiri hai
honton pe mere....
Noha - Honton Pe Mere
Shayar: Mujahid
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online