اصغرِ بے شِیر کے ساتھ ہو گئے ختم جفا
خود ستم رویا ہے مِل مِل کے گلے تیر کے ساتھ
ہو گئے ختم جفا ۔۔۔

دوڑتی جاتی ہے شہِ اکبرِ دلگیر کے ساتھ
زور چلتا ہے تدبیر کا تقدیر کے ساتھ
ہو گئے ختم جفا ۔۔۔

ننگے پا لگائیں بیمار کو تا شام لعین
بیڑیاں روئیں لہو پائوں کی زنجیر کے ساتھ
ہو گئے ختم جفا ۔۔۔

کِس میں دم تھا جو ردا لیتا سرِ زینب سے
ہائے عباس دلاور نہ تھے ہمشیر کے ساتھ
ہو گئے ختم جفا ۔۔۔

ساتھ چھوڑا نہیں زینب نے کبھی بھائی کا
سر برہنہ پھری در در سرِ شبیر کے ساتھ
ہو گئے ختم جفا ۔۔۔


asghare baysheer ke saath hogayi khatm jafa
khud sitam roya hai mil mil ke galay teer ke saath
hogayi khatm jafa....

daudte jaate hai sheh akbare dilgeer ke saath
zor chalta nahi tadbeer ka taqdeer ke saath
hogayi khatm jafa....

nange pa legaye bemaar ko ta shaam layeen
bediya royi lahoo paon ki zanjeer ke saath
hogayi khatm jafa....

kis may dum tha jo rida leta sare zainab se
haaye abbas-e-dilawar na thay hamsheer ke saath
hogayi khatm jafa....

saath chora nahi zainab ne kabhi bhai ka
sar barehna phiri dar dar sare shabbir ke saath
hogayi khatm jafa....
Noha - Hogayi Khatm Jafa

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online