ہو گئے ہم سے جدا مسلم کے لال
کر گئے دونوں قضا مسلم کے لال

شاہ کرتے تھے یہ نوحہ بار بار
ہو گئے دین پر فدا مسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

دیتے تھے آواز مقتل میں حسین
دو ہمیں پھر سے صدامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

ڈھونڈنے جائوں کہاں کس سمت کو
ہے کہاں اے کربلامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

اب کہاں پائے گا دلبندِ بتول
آپ جیسے باوفامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

کیا کروں شبیر کرتے تھے فغاں
کر گئے بے آسرامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

بھائیوں کے اور پدر کے سوگ میں
پہلے ہی تھے مبتلامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

اہلیبیتِ مصطفیٰ ماتم کرو
لب پہ آہ و بقامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔

پرسہ دیتا ہے رقیہ کو انیس
جن کے تھے یہ دلربامسلم کے لال
ہو گئے ہم سے جدا ۔۔۔۔۔


hogaye hum se juda muslim ke laal
kargaye dono khaza muslim ke laal

shaah karte thay ye noha baar baar
hogaye deen par fida muslim ke laal
hogaye hum se juda....

dete thay awaaz maqtal may hussain
do hamay phir se sada muslim ke laal
hogaye hum se juda....

dhoondne jaaun kahan kis simt ko
hai kahan ay karbala muslim ke laal
hogaye hum se juda....

ab kahan paayega dil bande batool
aap jaise ba wafa muslim ke laal
hogaye hum se juda....

kya karoo shabbir karte thay fughaan
kar gaye be-aasra muslim ke laal
hogaye hum se juda....

bhaiyon ke aur pidar ke sog may
pehle hi thay mubtila muslim ke laal
hogaye hum se juda....

ahlebaite mustufa matam karo
lab pe aaho buka muslim ke laal
hogaye hum se juda....

pursa deta hai ruqayya ko anees
jinke thay ye dilruba muslim ke laal
hogaye hum se juda....
Noha - Hogaye Humse Juda
Shayar: Anees
Nohaqan: Sajid Hussain Jafri
Download Mp3
Listen Online