ہو میرے لال کہاں
ہائے جنگل کا وہ سناٹا وہ پُر ہول فضا
اور ایسے میں کسی دُکھ بھرے دل کی وہ صدا
جیسے بچھڑی ہوئی اولاد کو ڈھونڈے کوئی ماں
ہو میرے لال کہاں۔۔۔

تم گئے جب سے عجب حال ہے بیٹا میرا
کوئی صورت سے نہیں قلب سنبھلتا میرا
گود اُجڑی ہے نظر آتا ہے جھولا ویران
ہو میرے لال کہاں ۔۔۔

خود بخود ہاتھ اُٹھے جاتے ہیں لینے کو تمہیں
کب سے بے چین ہوں لوریاں دینے کو تمہیں
ہو گئی رات بس آ گود میں آئو میری جاں
ہو میرے لال کہاں ۔۔۔

کس کی آغوش ہے اس بن میں بسائی بیٹا
نیند کس طرح مجھے چھوڑ کے آئی بیٹا
ماں کو بھی پاس بُلا لو وہیں سوتے ہو جہاں
ہو میرے لال کہاں ۔۔۔

زخم گردن کا خدا جانے دُھلایا کہ نہیں
جسم سے خون بھرا کُرتا وہ اُتارا کہ نہیں
کیا لہو زخم سے ناوق کے ابھی تک ہے رواں
ہو میرے لال کہاں ۔۔۔


ho mere laal kahan
haye jangal ka wo sannata wo purhaul fiza
aur aise may kisi dukh bhare dil ki wo sada
jaise bichri hui aulaad ko dhoonday koi maa
ho mere laal kahan....

tum gaye jab se ajab haal hai beta mera
koi soorat se nahi qalb sambhalta mera
godh ujdi hai nazar aata hai jhoola veeran
ho mere laal kahan....

khud ba khud haat uthay jaate hai lene ko tumhay
khabse bechain hoo mai loriya dene ko tumhay
ho gayi raat bas aa godh may aao meri jaan
ho mere laal kahan....

kiski aaghosh hai is ban may basayi beta
neendh kis tarha mujhe chor ke aayi beta
maa ko bhi paas bulalo wahin sotay ho jahan
ho mere laal kahan....

zakhm gardan ka khuda jaane dhulaya ke nahi
jism se khoon bahara kurta wo utaara ke nahi
kya lahoo zakm se nawak ke abhi tak hai rawan
ho mere laal kahan....
Noha - Ho Mere Laal Kahan

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online