شور تھا عاشور کو
ہائے حسین ہائے حسین

زہرا کی فغاں ،ہائے حسین
عباس کے بازو، ہائے حسین
اصغر کا گلا، ہائے حسین
زینب کی ردا،ہائے حسین

عاشور کو وقتِ عصر صدا،دیتا تھا منادی خالق کا
چھِنتی ہے سرِ زینب سے ردا،رو رو کے یہ کہتی ہے دکھیا
ہائے حسین ۔۔۔۔۔

ہمشکلِ نبی فرزندِ جواں، وہ پیاس میں تر لہجہ وہ زباں
تکبیر میں وہ اندازِ بیاں،عاشور کے دن اکبر کی اذاں
ہائے حسین ۔۔۔۔۔


shor tha ashoor ko
haaye hussain haaye hussain

zehra ki fughan, haaye hussain
abbas ke baazu, haaye hussain
asghar ka gala, haaye hussain
zainab ki rida,  haaye hussain

ashoor ko waqte asr sada, deta tha manadi khaaliq ka
chinti hai sare zainab se rida, ro ro ke ye kehti hai dukhiya
haaye hussain...

humshakle nabi farzande jawan, wo pyaas may tar lehja wo zaban
takbeer may wo andaaz e bayan, ashoor ke din akbar ki azan
haaye hussain...
Noha - Haaye Hussain
Shayar: Anwar Zahir, Anwar Meeruti
Nohaqan: Shareef Hussain(Lillay)
Download Mp3
Listen Online