شہیدِ کربلا ،ہے دین کی بقا،
ذبیح ہے نینوا حُسین بادشاہ
حشر میں رنگ لائے گا خونِ شہیداں دیکھنا
آئیں گی جب فاطمہ ، حالِ پریشاں دیکھنا
حشر میں رنگ لائے گا ۔۔۔

روبرو بابا کے جب خاتونِ جنت آئیں گی
خالی جھولی سرورِ قونین کو دیکھ لائے گی
پھر یقیں کہلائیں گا،محشر کا میداں دیکھنا
حشر میں رنگ لائے گا ۔۔۔

رکھ دیا برچھی نے اکبر کا کلیجہ چیر کے
رُخ بدلا دلِ ہے اُمت نے تیری تصویرکے
مالکِ کوثر ذرا اُمت کے احساں دیکھنا
حشر میں رنگ لائے گا ۔۔۔

اصغرِ معصوم کے لب پر سوالِ آب ہے
بوند پانی کے لیئے وہ کس قدر بیتاب ہے
نہر سے پانی نہیں دیتے مسلماں دیکھنا
حشر میں رنگ لائے گا ۔۔۔

زینب و کلثوم سے کہتا تھاشمرِ بد گوہر
شام میں جائوں گی ننگے سر پھروں گی در بدر
کربلا کے بعد اب تاریخ ِ زنداں دیکھنا
حشر میں رنگ لائے گا ۔۔۔

غم بھلا گُلزار کا اس دل کو روزِ حشر کا
جو ہے اولادِ پیعمبر کی محبت سے بھرا
بخشوا دینگے اُسے یثرب کے سُلطاں دیکھنا
حشر میں رنگ لائے گا ۔۔۔


shaheed-e-karbala, hai deen ki baqa,
zabi hai nainawa husaain baadshah
hashr may rang laayega khoone shaheeda dekhna
aayengi jab fatema, haal-e-pareshan dekhna
hashr may rang laayega....

roo-baru baba ke jab khatoon-e-jannat aayengi
khaali joli sarwar-e-kownain ko dikhlaayegi
phir yakeen kehlayenga, mehshar ka maidan dekhna
hashr may rang laayega....

rakhdiya barchi ne akbar ka kaleja cheer ke
rukh badal daale hai ummat ne teri tasveer ke
maalike kausar zara ummat ke ehsaan dekhna
hashr may rang laayega....

asghar-e-masoom ke lab par sawaale aab hai
boond paani ke liye wo kis qadar betaab hai
nehr se paani nahi dete musalmaan dekhna
hashr may rang laayega....

zainab-o-kulsoom se kehta tha shimr-e-badgohar
shaam may jaaongi nange sar phirongi dar badar
karbela ke baad ab tareekh zindaan dekhna
hashr may rang laayega....

gham bhala gulzaar ka is dil ko roze hashr ka
jo hai aulaade payambar ki mohabbat se bhara
bakshwa-denge use yasrab ke sultaan dekhna
hashr may rang laayega....
Noha - Hashr May Rang Layega
Shayar: Gulzaar
Nohaqan: Hasan Sadiq
Download Mp3
Listen Online