گھر فاطمہ زہرا کا عجب شان کا گھر ہے
یہ وحی کی منزل ہے یہ قرآن کا گھر ہے
اسلام کے ماحول میں ایمان کا گھر ہے
مومن کی مُنافق کی یہ پہچان کا گھر ہے
کچھ لوگ مرے جاتے ہیں اس رنج و محن میں
اس گھر کا جو دروازہ ہے مسجد کے صحن میں

اللہ نے اس گھر کو نبوت سے نوازا
دنیا میں اسے دین و شریعت سے نوازا
قسمت سے امامت سے ولایت سے نوازا
ہر فرد کو قرآن کی آیت سے نوازا
سانچے میں مشیعت کے یہ افراد ڈھلے ہیں
سب چادرِ تطہیر کے سائے میں پلے ہیں

یہ عزم کے فولاد اسی گھر میں ملیں گے
یہ نور کے اجساد اسی گھر میں ملیں گے
جبریل کے اُستاد اسی گھر میں ملیں گے
اس سطح کے افراد اسی گھر میں ملیں گے
مخلوق کے بعد آخری سرحد نظر آیا
جس فرد کو دیکھا وہ محمد نظر آیا

اصحاب مکرم ہیں مگر اپنی جگہ پر
غیر اپنی جگہ لختِ جگر اپنی جگہ پر
خار اپنی جگہ غُنچہ تر اپنی جگہ پر
سنگ اپنی جگہ لال و گوہر اپنی جگہ پر
پہلو میں جو بیٹھا ہو اسے دل نہیں کہتے
رہرو کو کبھی رہبرِ منزل نہیں کہتے

اللہ رے عز و شرف بنتِ رسالت
قندیل حرم شمع شبستانِ امامت
رحمت جو محمد ہیں تو یہ پارئہ رحمت
وہ کُلِ نبوت ہیں تو یہ جُزِ نبوت
آسان کہو معرفتِ ختمِ رسل کو
جو جُز کو نہ سمجھا ہو وہ کیا سمجھے گا کُل کو


ghar fathima zehra ka ajab shan ka ghar hai
ye wahi ki manzil hai ye quran ka ghar hai
islam ke mahol may eman ka ghar hai
momin ki munafiq ki ye pehchan ka ghar hai
kuch log marejate hai is ranjo mehan may
is ghar ka jo darwaza hai masjid ke sehan may

allah ne is ghar ko nabuwat se nawaza
dunya may ise deeno shariyat se nawaza
qismat se imamat se wilayat se nawaza
har fard ko quran ki aayat se nawaza
saanche may mashiyat ke ye afraad dhale hai
sab chadare tatheer ke saaye may pale hai

ye azm ke faulaad isi ghar may milenge
ye noor ke ajsaad isi ghar ay milenge
jibreel ke ustaad isi ghar may milenge
is satha ke afraad isi ghar may milenge
maqlooq ki baat aakhri sarhad nazar aaya
jis fard ko dekha wo mohamed nazar aaya

ashaab mukarram hai magar apni jagah par
ghair apni jagah laqte jigar apni jagah par
khaar apni jagah ghunchaye tar apni jagah par
sang apni jagah laal-o-gohar apni jagah par
pehlu may jo baitha ho usay dil nahi kehte
rehro kabhi rehbare manzil nahi kehte

allah re izzo sharafe binte risalat
qandeele haram shame shabistane imamat
rehmat jo mohamed hai to ye paraye rehmat
wo kulle nabuwat hai to ye juzze nabuwat
aasaan kaho maarifate khatme rasul ko
jo juz ko na samjha ho wo kya samjhega kul ko
Noha - Ghar Fathima Zehra

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online