دُخترِ شبیر کی تشنہ دہانی دیکھ کر
خون آنکھوں میں اُترآ تا ہے پانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔

دونوں ہاتھوں سے جگر کو تھام کر تڑپے حُسین
خاک میں ملتی محمد کی نشانی دیکھ کر
دُخترِشبیر ۔۔۔

عکس پیاسوں کا نظر آیا جو سطحِ آب پر
رو دیئے عباس  دریا کی روانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔

پانی پانی ہو گئیں دریا کی موجیں شرم سے
حضرتِ عباسکی آنکھوں میں پانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔

تک رہے ہیں پیار سے بیٹے کی صورت کو حُسین
موت روتی ہے سرہانے نوجوانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔

سر پٹختی ہے بہن خیمے میں روتے ہیں حرم
حلقِ شاہِ دین پرخنجر کی روانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔

ہائے کیا بتلائیں کیا گُزری دلِ شبیر پر
گھوڑوں کی ٹا پوں میں بھائی کی نشانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔

خشک ہونٹوں پر پھرائی جب زبان بے شیر نے
رو دیا لشکر ادائے بے زبانی دیکھ کر
دُخترِ شبیر ۔۔۔


dukhtare shabbir ki tashna-dahani dekh kar
khoon aankhon may utar aata hai pani dekh kar
dukhtare shabbir....

dono haaton se jigar ko thaam kar tadpe hussain
khaaq may milti mohamed ki nishani dekh kar
dukhtare shabbir....

aks pyaso ka nazar aaya jo sathay aab par
rodiye abbas darya ki rawani dekh kar
dukhtare shabbir....

pani pani hogayi darya ki mauje sharm se
hazrate abbas ki aankhon may pani dekh kar
dukhtare shabbir....

tak rahe hai pyar se bete ki soorat ko hussain
maut roti hai sarahne naujawani dekh kar
dukhtare shabbir....

sar patakti hai behan qaime may rote hai haram
halqe shahe deen pe khanjar ki rawani dekh kar
dukhtare shabbir....

haye kya batlaye kya guzri dile shabbir par
ghodon ki taapo may bhai ki nishani dekh kar
dukhtare shabbir....

khushk honton par phirayi jab zaban baysheer ne
rodiya lashkar adaye bezabani dekh kar
dukhtare shabbir....
Noha - Dukhtare Shabbir Ki

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online