زینب نے کہا یہ رورو کر دو حوصلہ بابازینب کو
تنہا ہے لعینوں میں دختر دو حوصلہ بابازینب کو

بابا میں بڑی بیٹی ہوں تیری سب بدلہ لینگے مجھ سے تیرا
لوگوں کے بدلتے ہیں تیور دو حوصلہ بابازینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔

یہ زینب ہے کلثوم ہے یہ آپس میں ستمگار کہتے ہیں
ہنستے ہیں تماشائی ہم پر دو حوصلہ بابازینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔

ہمت یوں بڑھائو بیٹی کی عابد کو بچا کر لے جائے
ہر گھر سے برستے ہیں پتھردو حوصلہ بابازینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔

احساس ردا کا ہوگا مجھے تم ہاتھ میرے سرپر رکھ دو
مشکل ہے اگر دینا چادر دوحوصلہ بابا زینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔

لوگوں کی نگاہیں اُٹھتی ہیں تشہیر کی ضربیں چلتی ہیں
بیٹی ہے تیری زیرِ خنجر دوحوصلہ بابا زینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔

دربار کے اُس دروازے پر اماں کو سنبھالا تھا تم نے
دربار کے اس دروازے پردوحوصلہ بابا زینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔

بولی وہ تکلم لوگوں میں اماںکو بُلائو تو کیسے
بیٹی کے لئے بن کر چادردوحوصلہ بابا زینب کو
زینب نے کہا یہ۔۔۔


zainab ne kaha ye ro ro kar do hausla baba zainab ko
tanha hai layeeno may dukhtar do hausla baba zainab ko

baba mai badi beti hoo teri sab badla lengay mujhse tera
logon ke badalte hai tewar do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....

ye zainab hai kulsoom hai ye aapas may sitamgar kehte hai
haste hai tamshayi hum par do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....

himmat yun badhao beti ki abid ko bachakar kejaye
har ghar se baraste hai pathar do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....

ehsas rida ka hoga mujhe tum haath mere sar par rakhdo
mushkil hai agar dena chadar do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....

logon ki nigahein uth-ti hai tasheer ki zarbein jalti hai
beti hai teri zere khanjar do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....

darbar ke us darwaze par amma ko sambhala tha tumne
darbar ke is darwaze par do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....

boli wo takallum logon may amma ko bulaun to kaise
beti ke liye bankar chadar do hausla baba zainab ko
zainab ne kaha ye....
Noha - Do Hausla Baba
Shayar: Mir Takallum
Nohaqan: Mir Hassan Mir
Download Mp3
Listen Online