دے کے سر شبیر نے اسلام زندہ کر دیا
کربلا کو جس کے سجدے نے معلٰی کر دیا
دے کے سر شبیر نے ۔۔۔۔۔

حشر تک کوئی یزیدی سر اُٹھا سکتا نہیں
جس کا بدلہ زندگی بھر دیں چُکا سکتا نہیں
فاطمہ کے لال نے احسان ایسا کر دیا
دے کے سر شبیر نے ۔۔۔۔۔

تیری قربانی سے پہلے دین کو آیا نہ چین
انبیائ سے بھی مکمل جو نہ ہو پایا حُسین
ایک سجدے نے تیرے وہ کام پورا کر دیا
دے کے سر شبیر نے ۔۔۔۔۔

آج بھی نازاں وفائیں ہیں تیرے عباس پر
نہر پر غازی کے دونوں کٹ گئے بازو مگر
تا ابد اسلام کے پرچم کو اونچا کر دیا
دے کے سر شبیر نے ۔۔۔۔۔

مار کر ابنِ علی کو چھینی زینب کی ردا
جب پڑھا کلمہ نبی کا پھر سرِ کرب و بلا
آلِ احمد کے لیئے کیوںحشر برپا کر دیا
دے کے سر شبیر نے ۔۔۔۔۔

ناز سے نوکِ سِناں پہ اُبھرا تھا جواد جو
کیسے بھولے گا زمانہ فاطمہ کے چاند کو
سر کٹا کے اُس نے اپنا یوں اُجالا کر دیا
دے کے سر شبیر نے ۔۔۔۔۔


deke sar shabbir ne, islam zinda kardiya
karbala ko jiske sajde ne mu-alla kardiya
deke sar shabbir ne....

hashr tak koi yazidi sar utha sakta nahi,
jiska badla zindagi bhar deen chuka sakta nahi
fatema ke laal ne ehsaan aisa kardiya
deke sar shabbir ne....

teri qurbani se pehle deen ko aaya na chain,
ambiya se bhi mukammil jo na ho paaya hussain
ek sajde ne tere woh kaam pura kardiya
deke sar shabbir ne....

aaj bhi nagaah wafayen hai tere abbas par,
nehr par ghazi ke dono kat gaye baazu magar
taa abad islaam ke parcham ko uncha kardiya
deke sar shabbir ne....

maar kar ibne ali ko cheeni zainab ki rida,
jab padha kalma nabi ka phir sare karbobala
aale ehmad ke liye kyon hashr barpa kardiya
deke sar shabbir ne....

naaz se noke sina pe ubhra thaa jawaad jo,
kaise bhoolega zamana fatema ke chand ko
sar kataake usne apna yun ujaala kardiya
deke sar shabbir ne....
Noha - Deke Sar Shabbir Ne
Shayar: Jawaad
Nohaqan: Hasan Sadiq
Download Mp3
Listen Online