درِ نجف سے ہٹوں گا نہ سنگِ در کی طرح
اسی صدف میں رہوں گا صدا گوہر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

وغا میں حضرتِ عباس تھے پِدر کی طرح
جبیں سے غیض ٹپکتا با شیرِ نر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

چمکتے عرش کے تارے تھے سب بنی ہاشم
اور اُن میں حضرتِ عباس تھے قمر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

جُدا ہوئے شبِ معراج کب نبی و علی
بہم تھے عرشِ بریں پر دل و جگر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

سلامی قیمتِ اشکِ اعزائ شاہ نہ پوچھ
بکے گا حشر کے بازار میں گوہر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

جواں پسر کے کلیجے سے کھینچ لی برچھی
حُسین کس میں ہے ہمت تیرے جگر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

بلا کے دشت میں عُریاں پڑی ہے لاشِ حُسین
دیارِ شام میں سیدانیوں کے سر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔

چمن کسی کا ہو تاراج یوں خُدا نہ کرے
کسی کا گھر نہ لُٹے فاطمہ کے گھر کی طرح
درِ نجف سے ۔۔۔۔۔


dare najaf se hatunga na sange dar ki tarha
isi sadaf may rahunga sada gohar ki tarha
dare najaf se....

wegha may hazrate abbas thay pidar ki tarha
jabeen se ghaiz tapakta ba shere nar ki tarha
dare najaf se....

chamakte arsh ke taare thay sab bani hashim
aur unmay hazrate abbas thay qamar ki tarha
dare najaf se....

juda huwe shabe meraj kab nabi o ali
baham thay arshe bari par dilo jigar ki tarha
dare najaf se....

salami qeemate ashke azae shah na pooch
bikega hashr ke bazaar may gohar ki tarha
dare najaf se....

jawan pisar ke kaleje se khaynch-li barchi
husssain kisme hai himmat tere jigar ki tarha
dare najaf se....

bala ke dasht may urya padi hai laashe hussain
dayare shaam may saidaniyo ke sar ki tarha
dare najaf se....

chaman kisi ka ho taaraaj yun khuda na kare
kisi ka ghar na lutay fathima ke ghar ki tarha
dare najaf se....
Noha - Dare Najaf Se

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online