چلو گھر چلو اے سکینہ
سسکیوں میں یہ زینب کی گونجی صدا

کیسے جھیلے گی ممتا جدائی کا غم
داغ اصغر ابھی بھی ہے تازہ
تم کو کس دل میں چھوڑے اکیلا
چلو گھر چلو اے سکینہ

کون آکر جلائے گا شمع لحد
کس کے اشکوں سے ہو گا اجالا
قید خانے میں ہر سو ہے گہرا اندھیرا
چلو گھر چلو اے سکینہ

تم سے ملنے کو بے چین و بے تاب ہے
یہ ہے صغرا کی حسرت کا عالم
دیکھتی ہے تمہارا ہی وہ رستہ
چلو گھر چلو اے سکینہ

اوڑھ لے گی فضا وحشتوں کی ردا
کوچ زندان سے اب ہے ہمارا
پھر یہ زندان سنسان ہو جائے گا
چلو گھر چلو اے سکینہ

بام و در سے برستی ہے بے رونقی
بن تمہارے خزاں کا ہے موسم
گھر کی ویرانیاں دے رہی ہے صدا
چلو گھر چلو اے سکینہ

خون رلاتا ہے آصف کو شام و سحر
دکھیا ماں کو وہ کہنا تڑپ کر
تم کو عباس غازی کا ہے واسطہ
چلو گھر چلو اے سکینہ


chalo ghar chalo ay sakina
siskiyon may ye zainab ki goonji sada

kaise jhaylegi mamta judai ka gham
daagh e asghar abhi bhi hai taaza
tumko kis dil maa chor aaye akela
chalo ghar chalo....

kaun aakar jalayega shammay lehed
kis ke ashkon say hoga ujalaa
qaid khanay may har su hai gehra andhera
chalo ghar chalo....

tumse milne ko bechain-o-betaab hai
ye hai sughra ki hasrat ka aalam
dekhti hai tumhara hi wo raasta
chalo ghar chalo....

odh legi fiza wehshaton ki rida
kooch zindan say ab hai hamara
phir ye zindaan sunsaan hojayega
chalo ghar chalo....

baam-o-dar say barasti hai be-raunaqi
bin tumhare qizan ka hai mausam
ghar ki veeraniya de rahi hai sada
chalo ghar chalo....

khoon rulata hai asif ko sham o seher
dukhiya maa ka wo kehna tadap kar
tumko abbas e ghazi ka hai waasta
chalo ghar chalo....
Noha - Chalo Ghar Chalo
Shayar: Asif Abidi
Nohaqan: Ali Murtuza
Download mp3
Listen Online