بجھ گئی پیاس چچا، لوٹ کے گھر میں آئو
پوری کر دوں یہ دُعا ،لوٹ کے گھر میں آئو

جانتی ہوں کہ کٹے،آپ کے بازو رن میں
آپ کے بعد بچا،کیا ہے میرے دامن میں
کچھ نہیں کرتی گِلا،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

ہوتے جاتے ہیں بہت ،شام کے گہرے سائے
کوئی بھی گھر میں نہیں ،کون مجھے بہلائے
تم کو دیتی ہوں صدا، لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

مجھ کو معلوم نہ تھا ، دُور وطن سے آکر
آپ سوجائینگے دریا پہ علم لہرا کر
لوچچا دن بھی ڈھلا ،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

اے چچا دیکھیئے چھنتی ہے پھپی کی چادر
بھائی سجاد کا کھینچا ہے لعیں نے بستر
کیا نہیں تم کو پتا،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

ماں یہ کہتی ہے کہ ہم، قیدی بھی ہوںگے عموں
چھن گئیں بالیاں کھائے ہیں تماچے عموں
دیکھودامن بھی جلا،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

ننھے جھولے میں کبھی،گود میں مادر کی کبھی
دیکھتی ہوں کے مہک ،پائوں کہیں اصغر کی
ساتھ اصغر کے چچا،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

روکے زینب نے کہا ،بالی سکینہ میری
بے چچا اور بے پدر ،ہونا ہے قسمت تیری
کس کو دیتی ہے صدا ،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔

شام سے آج بھی زائر جو کوئی آتا ہے
ساتھ ریحان وہ پیغام یہی لاتا ہے
میں ہوں زنداںمیں چچا،لوٹ کے گھر میں آئو
بجھ گئی پیاس چچا ۔۔۔۔


bujgayi pyaas chacha, laut ke gar may aao
poori kardo ye duwa, laut ke gar may aao

jaanti hoo ke katay, aapke baazu ran may
aapke baad bacha, kya hai mera daman may
kuch nahi karti gila, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

hotay jaatay hai bahot, shaam ke gehray saaye
koi bhi gar may nahi, kaun mujhe behlaaye
unko deti hoo sada, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

mujko maloom na tha, door watan se aakar
aap sojaa-engay darya pe alam lehrakar
lo chacha din bhi dhala, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

ay chacha dekhiye chin-thi hai phupi ki chadar
bhai sajjad ka khaincha hai laeen ne bistar
kya nahi tumko pata, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

maa ye kehti hai ke hum, qaid-e bhi hongay ammu
chingayi baaliya khaaye hai tamachay ammu
dekho daaman bhi jala, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

nanhe jhule may kabhi, godh may maadar ki kabhi
dekhti hoo ke mehek, paaun kahi asghar ki
saath asgkar ke chacha, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

roke zainab ne kaha, bali sakina meri
be-chacha aur be-padar, hona hai kismat teri
kisko deti hai sadaa, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...

sham se aaj bhi zaair jo koi aata hai
saath rehan wo paighaam yehi laata hai
mai hoo zindan may chacha, laut ke gar may aao
bujgayi pyaas chacha...
Noha - Bujhgayi Pyas Chacha
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online