رو رو مقتل میں کہتی تھیں زینب
بھیا بالی سکینہ کہاں ہے

جا کے ڈھونڈوں کہاں اس کو بن میں
شب ہے تاریک سنناٹا رن میں
ہوک اٹھتی ہے میرے بدن میں
بھیا بالی سکینہ

اٹھ کے دریا سے عباس آئو
ساتھ اکبر کو تم لے کے جائو
ڈھونڈ کے تم سکینہ کو لائو
بھیا بالی سکینہ

شاید اصغر کو وہ ڈھونڈتی ہو
کوزہ پانی کا لے کر گئی ہو
پاس بھائی کے نہ سو گئی ہو
بھیا بالی سکینہ

ہو چکی رن میں شام غریباں
فوج اعدائ میں اب ہے چراغاں
کوچ کے ہو رہے ہیں یہ ساماں
بھیا بالی سکینہ

بھیا دیکھو تو قسمت ہماری
جائے گی کس طرح یہ سواری
ہو گی محمل نہ اب وہ عماری
بھیا بالی سکینہ

تو لاش بے سر سے آواز آئی
غم نہ کھائو اے اماں کی جائی
آئو زینب بلاتا ہے بھائی
میری بالی سکینہ یہاں ہے

روتے روتے جو نیند آگئی ہے
غم کے طوفاں میں وہ کھو گئی ہے
میرے سینے پہ وہ سو گئی ہے
میری بالی سکینہ یہاں ہے

شہہ اب سکینہ کہاں ہے
کارواں کربلا کا رواں ہے
تذکرہ ان کا انجم جہاں ہے
شہہ کی پیاری سکینہ وہاں ہے


ro ro maqtal may kehti thi zainab
bhaiya bali sakina kahan hai

jaake dhoondu kahan usko ban may
shab hai tareeq sannata ran may
phook uth thi hai zere badan may
bhaiya bali sakina....

uthke darya se abbas aao
saath akbar ko tum leke jao
dhoond kar tum sakina ko lao
bhaiya bali sakina....

shayad asghar ko wo dhoondti ho
kooza pani ka lekar gayi ho
paas bhai ke na so gayi ho
bhaiya bali sakina....

ho chuki ran may shame ghariban
fauje aada may ab hai charaghan
pooch ke ye ho rahe hai ye pamaan
bhaiya bali sakina....

bhaiya dekho to kismat hamari
jaayegi kis tarha ye sawari
hogi mehmil na ab wo amaari
bhaiya bali sakina....

to laashe besar se awaaz aayi
gham na khao ay amma ki jaayi
aao zainab bulaata hai bhai
meri bali sakina yahan hai

rote rote jo neendh aagayi hai
gham ke toofan may wo kho gayi hai
mere seene pa wo sogayi hai
meri bali sakina....

sheh kahan ab sakina kahan hai
karwaan karbala ka rawan hai
taskira unka anjum jahan hai
sheh ki pyari sakina wahan hai
Noha - Bhaiya Bali Sakina
Shayar: Anjum
Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online