بے رِدا ہو کے پیعمبر کے گھرانے والے
آج دربار میں ظالم کے ہیں آنے والے

سر برہنہ سرِ دربار چلی ہے ز ینب
سر کھُلے آج رہیں سوگ منانے والے
بے رِدا ہو کے پیعمبر کے۔۔۔

بیڑیاں تھامے ہوئے آگئے ہیں سجادِ حزیں
پیچھے پیچھے ہیں پیعمبر کے گھرانے والے
بے رِدا ہو کے پیعمبر کے۔۔۔

قتل وارث ہوئے بازار میں تا شیر ہوئے
اب بھی تھکتے نہیں بیوو کو ستانے والے
بے رِدا ہو کے پیعمبر کے۔۔۔

خود چلی آئے گی تھم تھم کے نہ کر اتنی جفا
سیلیا بالی سکینہ کو لگانے والے
بے رِدا ہو کے پیعمبر کے۔۔۔

سر کھُلے سامنے ظالم کے سکینہ جائو
مر گئے آپ کے سب ناز اُٹھانے والے
بے رِدا ہو کے پیعمبر کے۔۔۔

دامنِ آلِ عبا چھُوٹ نہ جائے صادق
یہ ہیں محتاج کو سرتاج بنانے والے
بے رِدا ہو کے پیعمبر کے۔۔۔


berida hoke payambar ke gharane walay
aaj darbaar may zaalim ke hai aane walay

sar barehna sar e darbar chali hai zainab
sar khule aaj rahe sog manane walay
berida hoke payambar ke....

bediya thame hue aagay hai sajjade hazeen
peeche peeche hai payambar ke gharane walay
berida hoke payambar ke....

qatl waris hue bazaar may tasheer hue
ab bhi thakte nahi bewo ko satane walay
berida hoke payambar ke....

khud chale aayegi tham tham ke na kar itni jafa
sayliya bali sakina ko lagane walay
berida hoke payambar ke....

sar khule saamne zaalim ke sakina jao
mar gaye aap ke sab naaz uthane walay
berida hoke payambar ke....

damane aale aba chooth na jaye sadiq
ye hai mahtaaj ko sartaaj banane walay
berida hoke payambar ke....
Noha - Berida Hoke
Shayar: Sadiq
Nohaqan: Anjuman e Masoomeen
Download Mp3
Listen Online