بازارِ شام آ گیا
اکبر میرے جواں ،کس کو بُلائے ماں
زینب کی لو خبر، عابد ہے ناتواں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

دشت ِ بلا کو چھوڑ کر خاکِ شفا کو اوڑھ کر
اے فکرِ کبریائ سُنو کہتی ہوں ہاتھ جوڑ کر
کیسے چلے گی ماں اے میرے نوجواں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

قسمت کی پاسباں ہے وہ خیرُالنسائ کی جاںہے وہ
غربت کی انتہا ہوئی غیروں کے درمیاںہے وہ
شہزادئی جناں سہتی ہے سختیاں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

قاتل تیرا میرے پسر سجاد کا ہے ہمسفر
کم تو نہیں ہے یہ ستم سہتا رہا ہے وہ مگر
کیسے سہے بھلا بیمار سارباں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

میں نے سُنی ہے یہ صدا کہتے ہیں شام میں سبھی
بدلہ علی کا لیں گے ہم بنتِ علی سے آج ہی
پتھر سے ہیں بھری لوگوں کی جھولیاں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

نامحرموں کی بھیڑ میں اُٹھتی نہیں نظر میری
عباس کی قسم نہیں تشنہ لبی کا غم کوئی
دُکھ ہے یہ میری جاں سہمی ہیں بیبیاں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

پالا ہے جس نے عمر بھر اکبر تجھے حجاب میں
غازی کے سامنے بھی وہ بیٹا رہی نقاب میں
غیروں میں بے ردا جاتی ہے الاماں
بازارِ شام۔۔۔۔۔

نوکِ سناں کو دیکھ کر یاور یہ کہہ رہی تھی ماں
آ دیکھ تُو بھی نوجواں مادر کا اپنی امتحاں
آنکھیں نہ بندھ کر غیرت سے آسماں
بازارِ شام۔۔۔۔۔


bazare shaam aagaya
akbar mere jawan, kisko bulaae maa
zainab ki lo khabar, abid hai natawan
bazare shaam....

dashte bala ko chor kar khake shifa ko od kar
ay faqre kibriya suno kehti hoon hath jodh kar
kaise chalegi maa ay mere noujawan
bazare shaam....

qismat ki paasban hai wo khairunnisa ki jaan hai wo
ghurbath ki intehaan hui ghairon ke darmiyan hai wo
shazadiye jina sehti hai saqtiyaan
bazare shaam....

qatil tera mere pisar sajjad ka hai humsafar
kam to nahi hai ye sitam sehta raha hai wo magar
kaise sahe bhala bemaar saar baan
bazare shaam....

maine suni hai ye sada kehte hai shaam may sabhi
badla ali ka lenge hum binte ali se aaj hi
pathar se hai bhari logon ki jholiyaan
bazare shaam....

na-mehrumo ki bheed may uth-thi nahi nazar meri
abbas ki qasam nahi tashnalabi ka gham koi
dukh hai ye meri jaan sehmi hai bibiyaan
bazare shaam....

paala hai jisne umr bhar akbar tujhe hijab may
ghazi ke saamne bhi wo beta rahi naqaab may
ghairon may berida jaati hai allama
bazare shaam....

noke sina ko dekh-kar yawar ye keh rahi thi maa
aa dekh tu bhi noujawan maadar ka apni imtehan
aankhen na band kar ghairath se aasman
bazare shaam....
Noha - Bazare Sham Aagaya
Shayar: Yawar Abbas
Nohaqan: Shahid Baltistani
Download Mp3
Listen Online