بابا تیرے غم میں بے چین سکینہ ہے
زنداں کے اندھیرے میں مشکل میرا جینا ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔

دن رات میں روتی ہوں اور خاک پہ سوتی ہوں
آ غوش ہے مادر کی نہ باپ کا سینہ ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔

دفنا کے سکینہ کو عابد نے کہا رو کر
اے خاک تجھے سونپا زہرا کا نگینہ ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔

میں رو بھی نہیں سکتی زنداں میں تمہیں بابا
پابند مجھے کرتا رونے سے شمر کمینہ ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔

ہیں کان میرے زخمی اور نیل تماچوںکے
ظالم کے تماچوں سے بے حال سکینہ ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔

عابد نے کہا رو کر زینب سے پھُوپھی اماں
ہر ظلم و ستم سہنا اس گھر کا کرینہ ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔

کرتے ہیںبپا ماتم دنیا میں شاہِ دیں کا
مومن کے لیئے عرفاں بخشش کا خزینہ ہے
بابا تیرے ۔۔۔۔۔


baba tere gham may bechain sakina hai
zindan ke adheray may mushkil mera jeena hai
baba tere....

din raat mai rooti hoo aur khaak pe soti hoo
aghosh hai madar ki na baap ka seena hai
baba tere....

dafna ke sakina ko abid ne kaha rokar
ay khaak tujhe saumpa zehra ka nagina hai
baba tere....

mai ro bhi nahi sakti zindan may tumhe baba
paband mujhe karta rone se shimr kamina hai
baba tere....

hai kaan mere zakhmi aur neel tamacho ke
zaalim ke tamacho se behaal sakina hai
baba tere....

abid ne kaha rokar zainab se phuphi amma
har zulmo sitam sehna is ghar ka karina hai
baba tere....

karte hai barpa matam dunya may shahe deen ka
momin ke liye irfan bakshish ka khazina hai
baba tere....
Noha - Baba Tere Gham May
Shayar: Ifran
Nohaqan: Hasan Sadiq
Download Mp3
Listen Online