باطل کا زہر پھیل رہا ہے ہوائوں میں
رہیئے ولائے آلِ محمد کی چھائوں میں

لے کر چلا ہے ہاتھ میں تقدیر دین کی
گردن میں جس کے طوق ہے زنجیر ہے پائوں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔

اک روز وہ زمین پر گِر کر بکھر گئے
اُڑتے رہے جو ظلم کی اندھی ہوائوں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔

ہے اب بھی دینِ حق کے اُجالوں کا پاسباں
زہرا کا چاند ظلم کی کالی گھٹائوں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔

یوں مُصطفٰی کی آبرو رکھ لی حُسین نے
اسلام کو بچا لیا گِھر کر بلائوں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔

بچے تو سو گئے شبِ عاشور چین سے
لیکن بپا تھا شور قیامت کا مائوں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔

اے مومنو بہن سے جُدا کیا ہوئے حسین
زینب کے بین آج تلک ہیں فضائوں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔

گُلشن کے پھول دیکھ کر مُرجھا گئے عروج
لپٹے جو خیر حضرتِ عابد کے پائو ں میں
باطل کا زہر ۔۔۔۔۔


baatil ka zehr phail raha hai hawaon may
rahiye wila e aale mohamed ki chaon may

lekar chala hai haath may taqdeer deen ki
gardan may jiske tauq hai zanjeer hai paon may
baatil ka zehr....

ek roz wo zameen par gir kar bikhar gaye
udte rahe jo zulm ki andhi hawaon may
baatil ka zehr.....

hai ab bhi deen e haq ke ujalon ka paasban
zehra ka chand zulm ki kaali ghataon may
baatil ka zehr.....

yun mustufa ki aabroo rakhli hussain ne
islam ko bacha liya ghir kar balaon may
baatil ka zehr.....

bache to sogaye shabe ashoor chain se
lekin bapa tha shor qayamat ka maon may
baatil ka zehr.....

ay momino behan se juda kya hue hussain
zainab ke bain aaj talak hai fizaon may
baatil ka zehr.....

gulshan ke phool dekh kar murjha gaye urooj
lipte jo khair hazrate abid ke paon may
baatil ka zehr.....
Noha - Baatil Ka Zehr
Shayar: Urooj Bijnori
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online