اے غیرتِ مریم تیرا بازار میں آنا
نہ بھول سکے گا تجھے تا حشر زمانہ

اُٹھتی نہیں بابا سے تیری لاش علی اکبر
تھا تُو نے تو بیٹا میری میت کو اُٹھانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

کیوں زینب و کلثوم کی چھِنتی ہیں ردائیں
جائو ارے لوگو میرے غازی کو بلانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

جس در پہ سلامی دیا کرتے تھے پیعمبر
ٹھہرو اے مسلمانوں وہی گھر نہ جلانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

تُو دُخترِ زہرا ہے نواسی ہے نبی کی
بازار میں سر ننگے تیرا خطبہ سُنانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

نیند آئے بھلا کیسے سکینہ کو زمیں پر
تُو نے ہی سیکھایا اسے سینے پہ سُلانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

اسلام پہ دو بیٹوں کو قربان کیا ہے
قسمت میں تیری لکھا ہے یہ داغ اُٹھانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

اے دُخترِ حیدر وہ قیامت کی گھڑی تھی
سر ننگے تیرا شام کے دربار میں جانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

مر جاتے ہیں شوہر تو پناہ دیتے ہیں بھائی
کبریٰ کہاں جائے نہ رہا کوئی ٹھکانہ
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔

یہ مجلس و ماتم کی بنا تیرے ہی دم سے
پایا ہے عزادار نے بخشش کا بنانا
نہ بھول سکے گا ۔۔۔۔۔
اے غیرتِ مریم ۔۔۔۔۔


ay ghairat-e-maryam tera bazar may aana
na bhool sakega tujhe ta hashr zamana

uth-ti nahi baba se teri laash ali akbar
tha tune to beta meri mayyat ko uthaana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

kyun zainab-o-kulsoom ki chinti hai ridayein
jao are logo mere ghazi ko bulaana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

jis dar pe salami diya karte thay payambar
thehro ay  musalmano wohi ghar na jalaana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

tu dukhtare zehra hai nawasi hai nabi ki
baazar may sar nange tera khutba sunana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

neend aaye bhala kaise sakina ko zameen par
tune hi sikhaya iss sine pe sulaana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

islam pe do beton ko qurban kiya hai
kismat may teri likha hai ye daag uthaana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

ay dukhtare hyder wo qayamat ki ghadi thi
sar nange tera shaam ke darbaar may jaana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

mar jaate hai shauhar to pana dete hai bhai
kubra kahan jaaye na raha koi thikana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....

ye majlis o maatam ki bina tere hi dam se
paaya hai azaadar ne bakhshish ka banana
na bhool sakega....
ay ghairat-e-maryam....
Noha - Ay Ghairat e Maryam