اے یداللہ کے بے دست پسر اے عباس
ڈھونڈتی ہے تجھے ہر اک نظر اے عباس
اے علمدار حسین

تو نمائندہ علی کا ہے سر کرب و بلا
ہر علق حق تیرا
تو مدینے سے ہے عطرت کی سپر اے عباس
اے علمدار حسین

جنگ کرنے کی اجازت نہ ملی سرور سے
جانتے تھے انجام
یہ مشیت ہی رہی پیش نظر اے عباس
اے علمدار حسین

حکم پر شاہ کے مشکیزہ و نیزہ لے کر
رخ کیا دریا کا
تو نے سمجھایا اطاعت کا ہنر اے عباس
اے علمدار حسین

لاش خیمے میں نہ لے جائے خدارا ہر گز
سب سے ہوں شرمندہ
شہہ سے کہتا تھا تیرا دیدہ تر اے عباس
اے علمدار حسین

اک ماں روز دعا کرتی ہے بیٹے کی امان
شاہ دیں بچ جائے
تو اسی ماں کا ہے لخت جگر اے عباس
اے علمدار حسین

تیرا سر باندھ کے رومال میں جو رکھا ہے
کیا سبب اس کا ہے
کیوں سناں پر نہیں آیا تیرا سر اے عباس
اے علمدار

وقت شاہد ہے کہ از کرب و بلا کا یہ سرا
کیا مصائب گذرے
طے ہوا کیسے یہ زینب کا سفر اے عباس
اے علمدار حسین


ay yadullah ke bedast pisar ay abbas
dhondhti hai tujhe har ek nazar ay abbas
ay alamdar e hussain....

tu numa inda ali ka hai sare karbobala
har alaq haq tera
tu madinay se hai itrat ki sipar ay abbas
ay alamdar e hussain....

jang karne ki ijazat na mili sarwar se
jaante thay anjaam
ye mashiyyat hi rahi payshe nazar ay abbas
ay alamdar e hussain....

hukm par shah ke mashkeeza o naiza lekar
rukh kiya darya ka
tune samjhaya ata-at ka hunar ay abbas
ay alamdar e hussain....

laash khaime may na lejaye khudara hargiz
sab se hoo sharminda
sheh se kehta tha tera deedaye tar ay abbas
ay alamdar e hussain....

ek maa roz dua karti hai bete ka amaan
shah e deen bach jaye
to usi maa ka hai ek laqte jigar ay abbas
ay alamdar e hussain....

tera sar bandh ke rumaal may jo rakha hai
kya sabab iska hai
kyun sina par nahi aaya tera sar ay abbas
ay alamdar e hussain....

waqt shahid hai ke az karbobala ka ye sira
kya masaib guzre
tay hua kaise ye zainab ka safar ay abbas
ay alamdar e hussain....
Noha - Ay Alamdare Hussain
Shayar: Shahid Jafer
Nohaqan: Ali Murtuza
Download mp3
Listen Online