اکبر کا جنازہ
اٹھارہ برس کے علی اکبر کا جنازہ

شہ لاتے ہیں ہمشکل پیمبر کا جنازہ
اٹھارہ برس کے

اے گل کے مدد گار مدد کرنے کو آئو
شبیر سے اٹھتا ہے اکبر کا جنازہ
اٹھارہ برس کے

اس درجہ سکینہ سے تھا شرمندہ علمدار
شہ لا نہ سکے اپنے بردار کا جنازہ
اٹھارہ برس کے

پامال ہوا دشت میں گھوڑوں کی سموں سے
کس طرح اٹھے قاسم مضطر کا جنازہ
اٹھارہ برس کے

زینب ذرا بانوں کے کلیجے کو سنبھالو
شبیر کے ہاتھوں پہ ہے اصغر کا جنازہ
اٹھارہ برس کے


akbar ka janaza
athara baras ke ali akbar ka janaza

sheh laate hai hamshakle payambar ka janaza
athara baras ke....

ay kul ke madagaar madad karne ko aao
shabbir se uth-ta nahi akbar ka janaza
athara baras ke....

is darja sakina se tha sharminda alamdaar
sheh laa na sake apne biraadar ka janaza
athara baras ke....

pamaal hua dasht may ghodon ke sumon se
kis tarha uthay qasime muztar ka janaza
athara baras ke....

zainab zara bano ke kaleje ko sambhalo
shabbir ke haaton pa hai asghar ka janaza
athara baras ke....
Noha - Athara Baras Ke

Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online