ہزَ برِ دشتِ نینواامیرِ لشکرِ حُسین
نِہنگِ قُلزمِ وغا امیرِ لشکرِحُسین
خدنگِ ترکشِ قضائ امیرِ لشکرِ حُسین
برنگِ شاہِ لا فتاح امیرِ لشکرِ حُسین
جری،دلیر،باوفا امیرِ لشکرِ حُسین
وفا بحدِ معجزہ امیرِ لشکرِ حُسین
یہ ذوالفقارِ حیدری یہ شیربیشائہ نجف
یہ تیغ و تیزِ ہاشمی نشانِ جرائ تِ سلب
ہر اک کا مرکزِ نظر کفیل تِشنگانِ تف
کنارے نہرِ علقمہ تمام فوج کا ہدف
کسی سے پر نہ رُک سکا امیرِ لشکرِ حُسین

بہادرانِ صف شکن میںاس جری کے تذکرے
دلاورانِ تیغ و زن میں اس جری کے تذکرے
ہر اک وفا کی انجمن میں اس جری کے تذکرے
رسول پاک کے چمن میں اس جری کے تذکرے
غرور آلِ مصطفی امیرِ لشکرِ حُسین

حُسین کا اَخی بھی ہے حُسین کا غلام بھی
حُسین کی سپر بھی ہے تبر بھی ہے ہُصام بھی
حُسین کی زرا بھی ہے قمائ بھی ہے صِحام بھی
حُسین حکم دیںاگر تو شمر سے کلام بھی
وگرنہ وہ کُجا کُجا امیرِ لشکرِ حُسین

حُسین عزن دیں اگر ابھی یہ سب کو دیکھ لے
ابھی عراق و شام کو ابھی حلب کو دیکھ لے
ابھی ابھی یہ کوفیانِ بے ادب کو دیکھ لے
مقابلہ جو آ پڑے تو کُل عرب کو دیکھ لے
مثالِ شاہِ لا فتاح امیرِ لشکرِ حُسین

اشار ئہ امام ہو تو فتح میں دہرا ہے کیا
شُعاعِ مہر کے لیئے یہ شام کی گھٹا ہے کیا
فرات تک نہ جانے دے کسی میں حوصلہ ہے کیا
علی کے شیر کے لیئے یہ جنگ ِ کربلا ہے کیا
اُلٹ دے تخت شام کا امیرِ لشکرِ حُسین

یزید ِ بد نِہاد سے سکونِ ذات چھین لے
مُحافظین ِنہر سے حق حیات چھین لے
جو مرضیئ ِ حُسین ہو ابھی فرات چھین لے
فرات کیا ہے یہ وہ ہے کہ کائنات چھین لے
بڑا بلند حوصلہ امیرِلشکرِ حُسین

مگر یہاں تو حکم ہے کہ بس علی کے شیر بس
حُسین اپنی زندگی سے ہو چُکا ہے سیر بس
قریبِ وقتِ عصر ہے بس اب میرے دلیر بس
ہمارے کوُچ میں کہیں مزیدہو نہ دیر بس
کرے گا تا با گر وُغا امیرِلشکرِ حُسین


eezabre dashte nainawa ameere lashkare hussain
nihange qulzume wagha ameere lashkare hussain
khadange tarkashe khaza ameere lashkare hussain
barange shahe la-fata ameerre lashkare hussain
jari diler bawafa ameere lashkare hussain
wafa bahade maujeza ameere lashkare hussain
ye zulfaqare hyderi ye shere beshaye najaf
ye taygo tayz hasmi nishane jurrate salab
har ek ka markaze nazar kafeele tashnagane taf
kanare nehre alqama tamam fauj ka hadaf
kisi se par na ruk saka ameere lashkare hussain

bahadurane safshikan may is jari ke tazkire
dilwarane taygho an may is jari ke tazkire
har ek wafa ke anjuman may is jari ke tazkire
rasoole paak ke chaman may is jari ke tazkire
ghuroore aale mustafa ameere lashkare hussain

hussain ka aqi bhi hai hussain ka ghulam bhi
hussain ki sifar bhi hai tabar bhi hai husaam bhi
hussain ki zira bhi hai ama bhi hai sihaam bhi
hussain hukm de agar to shimr se kalaam bhi
wagarna wo kuja kuja ameere lashkare hussain

hussain izn de agar abhi ye sab ko dekh le
abhi iraq-o-sham ko abhi halab ko dekh le
abhi abhi ye koofiyane be-adab ko dekh le
muqabila jo aa pade to kul arab ko dekh le
misaale shahe la-fata ameere lashkare hussain

isharaye imam ho to fatha may dhara hai kya
shoyaye mehr ke liye ye sham ki ghata hai kya
furaat tak na jaane de kisi may hausla hai kya
ali ke sher ke liye ye jange karbala hai kya
ulat de taqt shaam ka ameere lashkare hussain

yazeede bad nihaad se sukoone zaat cheen le
muhazeene nehr se haqe hayaat cheen le
jo marziye hussain ho abhi furaat cheen le
furaat kya hai ye wo hai ke kaayenat cheen le
bada baland hausla ameere lashkare hussain

magar yahan to hukm hai ke bas alli ke sher bas
hussain apni zindagi se ho chuka hai sayr bas
qareebe waqte asr hai bas ab mere dilayr bas
hamare kooch may kahin mazeed ho na dayr bas
karega ta ba gar waghan ameere lashkare hussain
Noha - Ameere Lashkare Hussain
Shayar: Molana Syed Hasan Imdad
Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online