اکبر  نہیں آئے اصغر  نہیں آئے
دن بیت گیا اب رات ہوئی دلبر نہیں آئے

ہم نامِ علی ہم شکلِ نبی
جُرا،ت تھی سوا غیرت تھی بڑی
لیکن جب مشکل آئی گھڑی
ماں دیتی رہی رو رو کے صدا
اکبر نہیں آئے ۔۔۔

کہتی تھی یہ بانو رو رو
للہ بُلا دو اصغر کو
کیا جانے کس عالم میں ہو
رن کو گئے باپ کے ہاتھوں پر
پھر گھر نہیں آئے
اکبر نہیں آئے ۔۔۔

کیا گزری لال میرے تم پر
کچھ تو بولو جانِ مادر
کیا بات ہوئی رن میں سرور
لے کر تو گئے تھے ہاتھوں پر
لے کر نہیں آئے
اکبر نہیں آئے ۔۔۔

تم پر تو ہے سب حال عیاں
پانی تھا کہاں جو دیتی ماں
اتنی سی بات پہ جان دی جاں
گھر سے گئے ایسے ہو کے خفا
مُڑ کر نہیں آئے
اکبر نہیں آئے ۔۔۔

آجائو اے اصغر آئو
مادر پر لال ترس کھائو
اک بار گلے سے لگ جائو
ممکن ہے لوٹ کہ پھر دلبر
مادر نہیں آئے
اکبر نہیں آئے ۔۔۔

زخمی ہے گلا محبوب ہو تم
بیٹا زخموں سے چُور ہو تم
اب میں سمجھی کیوں دور ہو تم
میدان گئے اے لختِ جگر
کیونکر نہیں آئے
اکبر نہیں آئے ۔۔۔


akbar nahi aaye asghar nahi aaye
din beet gaya ab raat hui dilbar nahi aaye

hum name ali hum shakle nabi
jurrat thi siwa ghairat thi badi
lekin jab mushkil aayi ghadi
maa deti rahi ro ro ke sada
akbar nahi aaye....

kehti thi ye bano ro ro
lilaah bulado asghar ko
kya jaan ye kis aalam may ho
ran ko gaye baap ke haaton par
phir ghar nahi aaye
akbar nahi aaye....

kya guzri laal mere tum par
kuch to bolo jaane maadar
kya baat hui ran may sarwar
lekar to gaye thay haaton par
lekar nahi aaye
akbar nahi aaye....

tum par to hai sab haal ayaan
pani tha kahan jo deti maa
itni si baat pe jaan di jaan
ghar se gaye aise hoke khafa
mud kar nahi aaye
akbar nahi aaye....

aajao ay asghar aao
maadar par laal taras khao
ek baar galay se lag jao
mumkin hai laut ke phir dilbar
maadar nahi aaye
akbar nahi aaye....

zakhmi hai gala majboor ho tum
beta zakhmo se choor ho tum
ab mai samjhi kyon door ho tum
maidan gayi ay lakhte jigar
kyon kar nahi aaye
akbar nahi aaye....
Noha - Akbar Nahi Aaye

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online