اچھے میرے بابا

جب خلد میں پہنچوں تو سکینہ کو بلانا
اچھے میرے بابا

بابا میرے پیارے میرے عاشق میرے شیدا
اس وقت پھوپھی سے بتائے کیوں مانگا ہے ملبوس پرانا
اچھے میرے بابا

میں جان گئی جاتے ہو سر اپنا کٹانے دریا کے کنارے
پانی کا تو لانے کا فقط ہے یہ بہانہ
اچھے میرے بابا

تم جاتے ہو مرنے کو ہمیں کس پہ ہے سونپا یہ غیر کی ہے جائ
سجاد تو بیمار ہے بتلائو ٹھکانا
اچھے میرے بابا

در کانوں سے چھینے گا تو فریاد کروں گی میں شمر لعین کی
بیٹی کو ستم گر کے طمانچوں سے بچانا
اچھے میرے بابا


achay mere baba
hazrat se sakina ne kaha bhool na jaana
achay mere baba

jab khuld may pahuncho to sakina ko bulana
achay mere baba

baba mere pyare mere aashiq mere shayda
is waqt phuphi se bataliye kyon maanga hai malboos purana
achay mere baba

mai jaangayi jaate ho sar apna katane darya ke kanare
pani ka to laane ka faqad hai ye bahana
achay mere baba

tum jaate ho marne ko hamay kis pa hai sompa ye ghaur ki hai ja
sajjad to bemaar hai batlao thikana
achay mere baba

dur kano se cheenaga to faryaad karoongi mai shimre layeen ki
beti ko sitamgar ke tamachon se bachana
achay mere baba
Noha - Achay Mere Baba

Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online