آلِ محمد پہ آفت کی گھڑی ہے
بھیا تیری بہنا سر ننگے کھڑی ہے
نالہ و شیون سے اک حشر بپا ہے
کوئی نہ وارث رہا خیمہ ہر اک جل گیا
چھن گئی سر سے ردا کرتی تھی زینب بُکا

اُٹھنے لگے خیموں سے آگ کے شولے
کیسے تیری بہنا بچوں کو سنبھالے
غش میں میرا عابد شولوں میں گھِرا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

ہائے علی اکبر تم کیوں نہیں آئے
ظالموں نے آکے سب خیمے جلائے
کون کرے نصرت کوئی نہ رہا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

چھین لیئے کانوں سے شمر نے گوہر
کس سے کرے شکوہ بابا نہ برادر
خون سکینہ کے کانوں سے بہا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

آگ نے دامن کو جب اُس کے جلایا
بالی سکینہ نے رو رو کے سُنایا
دشتِ بیاباں ہے اور کربوبلا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

موت کے صحرا میں غم خردہ حراساں
ڈھونڈتی ہے بچی ہر سمت پریشاں
لب پہ فقط بابا کی صدا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

مقتل میں گونجی آوازِ بنیاہے
یوں نہ کرونالے ایلیّا ایلیّا
دور ہے دریا بھی اور خونی فضا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

تیرے چچا کو ہے اس وقت ازیت
جائو نہ دریا پہ گر ہے کوئی اُلفت
مجھ سے کہو بیٹا جو اُن سے گلہ ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

تیری پھپی بیٹا صحرائے بلا میں
ڈھوندتی ہے تم کو وہ گِردو نوا میں
تیری جدائی سے مصروفِ بُکاہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔

سُن کے انیسِ غم یہ نوحہ ارم میں
حُور و ملک نالے کرنے لگے غم میں
مجلسِ سرور میں کہرام بپا ہے
چھن گئی سر سے ۔۔۔۔


aal-e-muhammad pe aafat ki ghadi hai
bhaiya teri behna sar nange khadi hai
nalao-shewan se ek hashr bapa hai
koi na waris raha qaima har ek jal gaya
chin gayi sar se rida karti thi zainab buka

utne lage qaimo se aag ke sholay
kaise teri behna bachon ko sambhale
ghash may mera abid sholo may ghira hai
chin gayi sar se ...

haye ali akbar tum kyon nahi aaye
zaalimon ne aake sab qaimay jalaye
kaun kare nusrat koi na raha hai
chin gayi sar se ...

cheen liye kaano se shimr ne gauhar
kis se kare shikwa baba na biradar
khoon sakina ke kaano se baha hai
chin gayi sar se ...

aag ne daaman ko jab uske jalaya
bali sakina ne ro-ro ke sunaya
dasht-e-bayaban hai aur karbobala hai
chin gayi sar se ...

maut ke sehra may gham khurda hirasaa
dhoondti hai bachi har simt pareshan
lab pe faqat baba baba ki sada hai
chin gayi sar se ...

maqtal may goonji aawaz-e-bunayya
yun na karo naale aelaiya aelaiya
door hai darya bhi aur khooni fiza hai
chin gayi sar se ...

tere chacha ko hai is waqt aziyat
jao na darya pe gar hai koi ulfat
mujhse kaho beta jo unse gila hai
chin gayi sar se ...

teri phuphi beta sehra-e-bala may
dhoondti hai tumko wo girdo-niwa may
teri judai se masroof-e-buka hai
chin gayi sar se ...

sunke anees-e-gham ye nauha iram may
hoor-o-malak naale karne lage gham may
majlis-e-sarwar may kohraam bapa hai
chin gayi sar se ...
Noha - Aale Mohamed Pe
Shayar: Anees
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online